نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

صبح طیبہ میں ہوئی بٹتا ہے باڑا نور کا​
صدقہ لینے نور کا آیا ہے تارا نور کا​

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا
​​
تیرے ہی ماتھے رہا اے جان سہرا نور کا​
بخت جاگا نور کا چمکا ستارا نور کا​

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

میں گدا تو بادشاہ بھر دے پیالہ نور کا​
نور دن دونا تِرا دے ڈال صدقہ نور کا​

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

تاج والے دیکھ کر تیرا عمامہ نور کا​
سر جھکاتے ہیں الٰہی بول بالا نور کا​

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

ناریوں کا دور تھا دل جل رہا تھا نور کا​
تم کو دیکھا ہوگیا ٹھنڈا کلیجہ نور کا​

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

جو گدا دیکھو لیے جاتا ہے توڑا نور کا​
نور کی سرکار ہے کیا اس میں توڑا نور کا​

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

تیری نسلِ پاک میں ہے بچہ بچہ نور کا​
تو ہے عینِ نور تیرا سب گھرانہ نور کا​

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

اے رضا یہ احمدِ نوری کا فیضِ نور ہے​
ہوگئی میری غزل بڑھ کر قصیدہ نور کا

نور آگیا نور آگیا حق کا نور آگیا

Leave a Reply

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.