چشمِ دل چاہے جو اَنوار سے ربط

چشمِ دل چاہے جو اَنوار سے ربط   چشمِ دل چاہے جو اَنوار سے ربط رکھے خاکِ درِ دلدار سے ربط اُن کی نعمت کا طلبگار سے میل اُن کی رحمت کا گنہگار سے ربط دشتِ طیبہ کی جو دیکھ آئیں بہار ہو عنادِل کو نہ گلزار سے ربط یا خدا دل نہ ملے دُنیا …

چشمِ دل چاہے جو اَنوار سے ربط Read More »