عاصیوں کو دَر تمہارا مل گیا

عاصیوں کو دَر تمہارا مل گیا عاصیوں کو دَر تمہارا مل گیا بے ٹھکانوں کو ٹھکانا مل گیا فضلِ رب سے پھر کمی کس بات کی مل گیا سب کچھ جو طیبہ مل گیا کشفِ رازِ مَنْ رَّاٰنِی یوں ہوا تم ملے تو حق تعالیٰ مل گیا بے خودی ہے باعثِ کشفِ حجاب مل گیا …

عاصیوں کو دَر تمہارا مل گیا Read More »