Ithan Main Muthri Nit Jaan Ba Lab Lyrics

Ithan Main Muthri Nit Jaan Ba Lab Lyrics

 

Ithan Main Muthri Nit Jaan Ba Lab
Oo Taan Khush Wasda Mulk Arab

اتھاں میں مٹھڑی نت جان بہ لب
او تاں خوش وسدا وچ ملک عرب

ادھر میری جان پہ بنی ہوئی ہے
اور وہ خوش و خرم ملک عرب میں بس رہا ہے

ہر ویلے یار دی تانگھ لگی
سُنجے سینے سِک دی سانگ لگی
ڈکھی دِلڑی دے ہتھ ٹانگھ لگی
تھئے مل مل سول سمولے سب

ہر وقت محبوب کا انتظار ہے
ویران سینے میں اشتیاق کا تیر لگا ہے
دکھی دل کے ہاتھ سہارا آیا بھی تو
غموں کے ہجوم کا جو دل میں سمائے ہوئے ہیں

تتی تھی جوگن چو دھار پھراں
ہند سندھ پنجاب تے ماڑ پھراں
سنج بار تے شہر بزار پھراں
متاں یار ملم کہیں سانگ سبب

نیم جان دیوانی بن کر چاروں طرف پھرتی ہوں
ہند ،سندھ پنجاب اور ماڑ پھرتی ہوں
ویرانے اور شہر ہر جا پھرتی ہوں
کہ کہیں میرا یار کسی سبب سے مل جائے

جیں ڈینہ دا نینہ دے شینہ پُٹھیا
لگی نیش ڈکھاں دی عیش گھٹیا
سر جوبن جوش خروش ہٹیا
سُکھ سڑ گئے مر گئی طرح طرب

جس دن سے عشق کے شیر نے مجھے زخمی کیا ہے
دکھوں کے نشتر لگ رہے ہیں عیش ختم ہو گیا ہے
سر سے جوانی کا جوش و خروش اُتر گیا
سکھ ختم ہو گئے اورخوشیاں مٹ گیئں ہیں

توڑیں دھکڑے دھوڑے کھاندڑیاں
تیڈے نام تے مفت وکاندڑیاں
تیڈی باندیاں دی میں باندڑیاں
ہے در دیاں کُتیاں نال ادب

تیرے لئے دھکے اور ٹھوکریں کھاتی ہوں
تیرے نام پر بے مول بک جاتی ہوں
تیری باندیوں کے بھی باندی ہوں
تیرے در کے کتوں کا بھی ادب کرتی ہوں

واہ سوہنا ڈھولن یار سجن
واہ سانول ہوت حجاز وطن
آدیکھ فرید دا بیت حزن
ہم روز ازل دی تانگھ طلب

سبحان اللہ کیا پیارا لاڈلا محبوب ہے
اور کیا ہی پیارا حجاز کا وطن ہے
آ ذرا فرید کا غموں کا گھر تو دیکھ
مجھے تو ازل سے ہی تیرا انتظار ہے

Khawaja Ghulam Farid
خواجہ غلام فرید

Leave a Comment

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.